Results 1 to 1 of 1
  1. #1
    dR Rockers www.desirulez.net
    Join Date
    Oct 2010
    Posts
    17

    T

    Default اگرچہ دو کناروں کا کہیں سنگم نہیں ہوتا

    Follow us on Social Media








    اگرچہ دو کناروں کا کہیں سنگم نہیں ہوتا
    مگر ایک ساتھ چلنا بھی تو کوئی کم نہیں ہوتا

    بدن سے روح جاتی ہے تو بچھتی ہے صفِ ماتم
    مگر کردار مر جائے تو کیوں ماتم نہیں ہوتا

    ہزاروں ظلمتوں میں بھی جواں رہتی ہے لو اس کی
    چراغِ عشق جلتا ہے تو پھر مدھم نہیں ہوتا

    مداوا آپ ہو جاتا ہے اپنے درد کا اکثر
    وہ جن زخموں کا دنیا میں کوئی مرہم نہیں ہوتا

    وہ آنکھیں ایک لٹا گھر ہیں جہاں آنسو نہیں رہتے
    وہ دل پتھر ہے جس دل میں کسی کا گھر نہیں ہوتا

 

 

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •